You are here
Home > منتخب کالم نگار

سعودی عرب اور پاکستان کی دوستی عروج پر : خان صاحب میں آپ کا شدید نظریاتی مخالف سہی لیکن اگر اپنی اور ملک و قوم کی خیر چاہتے ہو توسعودی عرب سے تعلقات کے ضمن میں ایک احتیاط ضرور کر لینا ۔۔۔۔ سلیم صافی کی وزیراعظم پاکستان کے لیے جاندار تجاویز

لاہور (ویب ڈیسک) سعودی عرب اور پاکستان کے تعلق کی کئی جہتیں ہیں۔ اس کا مقابلہ اور موازنہ کسی بھی دوسرے ملک کے ساتھ تعلق سے نہیں کیا جا سکتا۔ کسی قسم کا سفارتی، معاشی اور تزویراتی تعلق نہ ہوتا تو بھی مکہ اور مدینہ کے وجہ سے یہ ملک

درختوں سے پیار اور درختوں کے پیچھے پیار ۔۔۔ ماں باپ کے ساتھ سونے کا عادی شرارتی کاکا وغیرہ وغیرہ ۔۔۔۔۔ توفیق بٹ کی چند دلچسپ لطائف سے سجی خصوصی تحریر

لاہور (ویب ڈیسک) لو(Love)کو اُردو میںلِکھنے میں بڑی احتیاط برتنی پڑتی ہے کہ ل کے ساتھ و کی جگہ کچھ اور نہ لگ جائے، اصل میں مجھے یہ کالم ”ویلنٹائن ڈے“ کے حوالے سے محبت پر لکھنا ہے جواب اُتنی خالص نہیں رہی جتنی کبھی ہوا کرتی تھی، جس کے

ناز کرتا ہے وطن۔۔۔۔بشکریہ روزنامہ جنگ۔۔۔۔ مظہر بر لاس

طارق ملک پروفیسر فتح محمد ملک کے فرزند ہیں، پروفیسر طاہر ملک کے بھائی ہیں، کچھ عرصہ پہلے طارق ملک نادرا کے چیئرمین تھے پھر ایک ایسی حکومت آ گئی جس کے لیڈر نے الیکشن کے روز پورے دن کی پولنگ دیکھنے کے بعد رات کو ساڑھے دس بجے پتہ

ہمارا ریڈیو پاکستان ہمیں واپس کرو رضا علی عابدی۔۔۔۔بشکریہ روزنامہ جنگ

پچھلے دنوں ریڈیو کا عالمی دن منایا گیا۔ جہاں کہیں اس دن کی بات ہوئی، یہی ہوئی کہ ریڈیو کے دن چلے گئے، یہ ٹیلی وژن کا زمانہ ہے۔ اوپر سے سوشل میڈیا نے ہلچل مچائی ہے اور اسمارٹ ٹیلی فون نے تو ساری دنیا اٹھا کر آپ کی ہتھیلی

چنیوٹ ؔسونے کے ذخائر۔ شریف برادران سے پوؔچھیں؟۔۔۔بشکریہ روزنامہ 92

معزز قارئین!۔مَیں آپ سے اردو، پنجابی اور فارسی زبان کے عالم و فاضل ، اپنے ایک بزرگ دوست ، تحریک پاکستان کے (گولڈ میڈلسٹ) کارکن چودھری ظفر اللہ خان سے تعارف کرا چکا ہُوں کہ ’’ جب بھی مَیں اپنا کالم لکھنے سے پہلے کسی شعر کا دوسرا مصرعہ

بہت بڑا حج سکینڈل …بشکریہ نئی بات

میرے پاس بنچ مارک نان رجسٹرڈحج آپریٹرز، آل پاکستان حج فورم ایسوسی ایشن، کا تیار کردہ تین لاکھ 75 ہزار850 روپے کا حج پیکج ہے جس میں مکہ مکرمہ میں تیس سے زائد دن کے لئے عزیزیہ کے اندر ہی مستقل رہائش دی گئی ہے ، سرکاری پیکج کی

میڈیا کی ستائی مظلوم عورت۔۔۔۔بشکریہ روز نامہ 92 نیوز

بیسویں صدی کے آغاز میں جب سودی بینکاری کے سرمائے سے کارپوریٹ سرمایہ داری نظام مضبوط ہوا تو عورت کی آزادی اور مساوی انسانی حقوق کی آوازیں بلند ہونا شروع ہوئیں۔ یہ آوازیں کسی شعوری ترقی یا علمی انقلاب کا نتیجہ نہیں تھیں بلکہ ایک کاروباری ضرورت کے تحت

مگر۔۔۔بشکریہ دنیا نیوز

ایک بار پھر واضح ہوا کہ اخلاقی اعتبارے سے ہم دلدل میں پڑے ہیں۔سب سے بڑھ کر یہ کہ ملک کو ایک کارگر نظامِ انصاف کی ضرورت ہے۔ اتنی شدید ضرورت، جتنی زندگی کو آکسیجن کی ہوتی ہے۔ اللہ کی آخری کتاب میں لکھا ہے ولکم فی القصاصِ حیاۃ یا اولی

پانی آنکھ میں بھر کر لایا جا سکتا ہے۔۔بشکریہ دنیا نیوز

کتاب وزیر اعظم کی میز پر رکھی تھی۔ سینٹر ٹیبل کی اس نکڑ پر جہاں عمران خان بیٹھے تھے۔ کتاب کا سر ورق دیکھ کر مجھے خوش گوار حیرت ہوئی۔ جدید عرب سلطنت کے بانی کی آٹو بائیو گرافی کا عنوان تھا: "MY STORY"۔ کچھ سال پہلے دبئی کے حکمران شیخ

Top