You are here
Home > خبریں > پاکستان > میاں صاحب تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو۔۔۔۔۔جوتا رسید کیے جانے کے بعد اگر نواز شریف یہ تحریر پڑھ لیں تو انکے دل کو ضرور قرار آ جائے گا

میاں صاحب تمہیں یاد ہو کہ نہ یاد ہو۔۔۔۔۔جوتا رسید کیے جانے کے بعد اگر نواز شریف یہ تحریر پڑھ لیں تو انکے دل کو ضرور قرار آ جائے گا

لاہور (ویب ڈیسک) سال 2010 ء کا ایک واقعہ ہے ، صدرِ پاکستان آصف علی زرداری برطانیہ کے دورے پر جاتے ہیں ،لندن میں ایک تقریب کے دوران بھمبر آزادکشمیر کا ایک ادھیڑ عمر شخص راجہ شمیم صدر کی جانب جوتا لہرا دیتا ہے ،گوکہ جوتا صدر تک نہیں پہنچا ،

اس کی کوئی تصویر یا ویڈیو موجود نہیں ہے مگر وقوعہ بن جاتا ہے ۔ اس وقت کی اپوزیشن بمعہ انقلابی نواز شریف و عمران نیازی اس قبیح عمل کو ویلکم کہتے ہیں ، بھرپور دادِ تحسین دیتے ہیں ، تمام حق پرست میڈیا چینلز اسپیشل ٹرانسمیشن چلاتے ہیں ، بریکنگ نیوز ، تجزیے ، تبصرے ، جگتیں ، مذاق ، کارٹون سب کچھ ہوتا ہے ۔ جوتا مارنے کا دعویٰ کرنے والا راجہ شمیم نیوز چینلز میں مدعو کیا جاتا ہے ، اس سے اس کے جذبات ، تاثرات اور احساسات دریافت کیے جاتے ہیں ۔ اس کو تمغہء حسن کارکردگی پانے والے ہیرو کی طرح آوء بھگت کی جاتی ہے ۔ آج کے وزیرِاعظم آزادکشمیر بااصول سیاہ ستدان اور جمہوریت کے محافظ مہان راجہ فاروق حیدر خان صاحب جیو آفس جا کر اس بندے کو شاباش دیتے ہیں داد تحسین عنایت فرماتے ہیں کہ تو نے بہت اچھا کام کیا ،لیکن کسی نون لیگی ضیاع الحقی کے وہم و گمان میں بھی نہ تھا کہ بہت جلد 2018 ء بھی آنے والا ہے اور اس وقت تک ان کے سیاہ کارنامے پاکستان کے بچے بچے تک پہنچ جائیں گے معلوم ہو جائیں گے اور انھیں گن گن کر اپنے اعمال کا حساب جواب دینا پڑے گا ۔ شاید ان کو یہ احساس نہیں تھا اس وقت کہ خدائی انتقام اور مکافاتِ عمل بھی کوئی چیز ہوتی ہے ۔ آج راجہ فاروق حیدر صاحب سمیت پورے پاکستان کا ہر ایک نونی اور پٹواری اس افسوسناک واقعے پر چوں چوں تو ضرور کرتا ہے ، ان کو یہ عمل برا بھی لگا اور لگنا بھی چاہیے ، لیکن کیا ہی اچھا ہوتا کہ یہ دوسروں کے لیے بھی برا کہتے اور سمجھتے ،مگر مجھے یقین ہے ان میں سے ایک بھی اپنے بھیانک ماضی پر شرمندہ اور نادم نہیں ہوگا ۔ کیونکہ جو شرمندہ ہونا جانتے ہیں وہ نون میں نہیں ہوتے ۔ ہوسکتا ہے میری باتیں بہت سوں کو کڑوی اور بری لگیں ، لیکن بخدا یہ سچ ہے ، اور سچ تو کڑوا ہوتا ہے۔(ش س م)

Leave a Reply

Top