You are here
Home > خبریں > انٹر نیشنل > مائیکروسافٹ بھی بڑے سکینڈل کی زد میں، 6 سال میں کتنی شکایات درج کرائی گئیں؟ناقابل یقین انکشاف ہو گیا

مائیکروسافٹ بھی بڑے سکینڈل کی زد میں، 6 سال میں کتنی شکایات درج کرائی گئیں؟ناقابل یقین انکشاف ہو گیا

نیویارک(ویب ڈیسک)امریکی سافٹ ویئر کمپنی مائیکرو سافٹ کے خلاف صنفی امتیاز اور خواتین کو جنسی ہراساں کرنے کی سیکڑوں شکایات درج کرادی گئیں۔مائیکروسافٹ کے خلاف جنسی تعصب اور جنسی ہراسانی کی 238 تحریری شکایات درج کرائی گئی ہیں۔خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق مائیکرو سافٹ کے خلاف اپنی خواتین ملازمین کے ساتھ

2010ء سے 2016ء کے درمیان صنفی امتیاز اور جنسی ہراسانی کی 238 تحریری شکایات درج کرائی گئیں۔یہ انکشاف امریکی عدالت کی جانب سے شکایات کی دستاویزات منظر عام پر لانے کے بعد ہوا ہے۔ شکایات میں کہا گیا ہے کہ مائیکروسافٹ کی مروجہ پالیسیاں اور طریقہ کار جانب داری پر مبنی ہے جس میں تکنیکی امور سے وابستہ خواتین ملازمین کی تنخواہیں، مراعات اور ان کی اگلے عہدوں پر ترقی مردوں کے ہم پلہ نہیں ہوتیں جب کہ ان خواتین کو اپنے ہم منصب مردوں کے مساوی معاوضے بھی نہیں دیے جاتے۔شکایات میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ مائیکرو سافٹ کی صنفی امتیاز پر مبنی پالیسیاں اور طریقہ کار تکنیکی امور انجام دینے والی خواتین ملازمین کی حق تلفی کی منظم اور دانستہ خلاف ورزیاں ہیں اور یہ سب کچھ صنفی مساوات کی غیر جانب داری کی نگرانی نہ کرنا اور اسے مکمل نظر انداز کرنے کا نتیجہ ہے۔دوسری جانب مائیکرو سافٹ نے ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ ان کی صنفی امتیاز پر مبنی کوئی پالیسیاں نہیں اور کمپنی اپنے ملازمین کو مساوی حقوق کے ساتھ ساتھ ان سے کوئی جانب داری نہیں برت رہی۔ایک اور خبر کے مطابق ملائیشیا کے دارلحکومت کوالا لمپور میں ایپل

کی گیجٹس سیل کے دوران جس میں افراد تو کھنچے چلے آئے لیکن ہاتھ ان کے کچھ نہ آیا۔گزشتہ ہفتے کوالا لمپور کے مائے ٹاؤن شاپنگ مال کے ایک اسٹور ’سوئچ‘ نے 200 ایپل گیجٹس پر سیل لگائی جس میں آئی فون 5 ایس کی قیمت 50 ڈالر یعنی تقریباً ساڑھے 5 ہزار پاکستانی روپے ، 64 جی بی میک بک 128 ڈالر یعنی 14 ہزار روپے اور ایسے ہی دیگر گیجٹس شامل تھیں۔کمپنی نے 200 گیجٹس پر جب سیل کا اعلان کرتے ہوئے امید کی کہ ممکنہ طور پر تقریباً 300 افراد سیل میں دوڑے چلے آئیں گے لیکن وہاں اعلان ہوتے ہی لوگوں کا سیلاب امڈ آیا۔خریداروں کا یہ حال تھا کہ نا صرف دکان کے باہر طویل قطاریں تھیں بلکہ بالائی منزل سے لے کر پارکنگ کے راستے تک خریداروں کا ہجوم تھا۔شاپنگ مال میں خریداروں کو کنٹرول کرنے کی انتھک کوشش کی گئی لیکن جیسے ہی اسٹور کا دروازہ کھول کر چند خریداروں کو داخل کیا تو سب ہی دکان میں ٹوٹ پڑے۔ایسی صورت حال میں کمپنی نے فوری طور پر فیصلہ لیتے ہوئے سیل ملتوی کردی اور تمام خریداروں سے معذرت کی۔سیل کے دوران کی دھکم پیل کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوچکی ہے۔

Leave a Reply

Top