You are here
Home > خبریں > پاکستان > ٹیکس چوری میں 150 افراد کے ملوث ہونے کا انکشاف،ایف بی آر نے بڑے بڑوں کا پول کھول دیا

ٹیکس چوری میں 150 افراد کے ملوث ہونے کا انکشاف،ایف بی آر نے بڑے بڑوں کا پول کھول دیا

اسلام آباد(ویب ڈیسک)ایف بی آرنے پائلٹ پروجیکٹ کے تحت وفاقی دارالحکومت میں 450 سے زائد پلازوں کی میپنگ مکمل کرلی اور ان میں قائم دکانوں، شاپنگ مالز اور سپراسٹور، آفسز وفلیٹس اور ان کے مالکان کے کوائف اکٹھے کرلیے۔200سے زائدکے پاس این ٹی این ہی نہیں،ایف بی آرنے450پلازوں کی میپنگ مکمل کر لی۔

اکھٹے کئے جانے والے کوائف میں سے200 سے زائد پلازہ مالکان کے پاس این ٹی این تک نہیں جبکہ 150سے زائد ٹیکس چوری میں ملوث ہیں اور اکثریت انکم ٹیکس گوشوارے جمع نہیں کرارہی۔ ’’ایکسپریس‘‘ کو دستیاب دستاویز کے مطابق براڈننگ آف ٹیکس بیس کے نئے لوگوں کو ٹیکس نیٹ میں لانے کے پروجیکٹ کے تحت بی ٹی زون اسلام آباد نے نو تعمیر رہائشی و کمرشل علاقوں میں اربوں روپے کی لاگت سے بننے والے ساڑھے 450 سے زائد پلازوں کی نشاندہی کی اور ان پلازوں میں قائم دکانوں، شاپنگ مالز، سپر اسٹور،آفسز و فلیٹس اور ان کے مالکان کے کوائف اکٹھے کیے۔جن کی ایف بی آر کے پاس ڈیٹا کے ساتھ کراس میچنگ کے دوران کروڑوں روپے کی ٹیکس چوری کاانکشاف ہوا ہے۔ دستاویز کے مطابق ایف بی آر کی جانب سے مذکورہ تمام پلازہ مالکان کے کوائف کے گزشتہ 4 سال کے ریکارڈ کی چھان بین کی جارہی ہے۔ایک دوسری خبر کے مطابقراولپنڈی کے آریا محلے میں نجی ہسپتال چلانے والی خاتون ڈاکٹر سمیت لندن میں منشیات کے الزام میں گرفتار پاکستانی بھی برطانیہ میں آف شور اثاثہ جات کے مالک ہیں۔ڈان کی تحقیقات کے مطابق راولپنڈی میں آریا محلے کی تنگ گلیوں میں قائم اجمل ہسپتال کی ڈاکٹر رضیہ اجمل

بھی آف شور کمپنی میل کراس لیمٹڈ کی مالکن ہیں اور مذکورہ کمپنی کے ذریعے ستمبر 2002 میں لندن کے علاقے وی ویلی میں چھ کمروں کا ٹیرسڈ ہاؤس 4 لاکھ 75 ہزار پاؤنڈ (7 کروڑ 30 لاکھ 93 ہزار روپے) میں خریدا گیا تھا جس کی موجودہ مالیت 9 لاکھ 65 ہزار پاؤنڈ (15 کروڑ روپے سے زائد) ہے۔متحدہ عرب امارت میں مقیم پاکستانی صنعت کار آصف حفیظ بھی برطانیہ میں دو فارم ہاؤسز کے مالک ہیں، انہیں اگست 2017 کو لندن میں منشیاب کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور وہ اپنے دفاع کے لیے مقدمہ لڑ رہے ہیں۔سروارنی ایس اے نامی آف شور کمپنی کے ذریعے انہوں نے 50 لاکھ پاونڈ سے زائد ملکیت کے دو فارم ہاوسز، میڈین ہیڈ اور بیرک شائر میں خریدے۔آصف حفیظ کروان کورٹ میں مہنگے فلیٹ کے بھی مالک ہیں جو سینٹرل لندن میں واقع ریجنٹ پارک مسجد کے پاس قائم ہے لیکن یہ مذکورہ فلیٹ آف شور کمپنی کے ذریعے نہیں خریدے گئے۔لاہور سے تعلق رکھنے والے صنعت کار اور داؤد ہرکیولیز کارپوریشن کے چیئرمین حسین داؤد بھی بریسٹل گارڈن میں 10 لاکھ پاؤنڈ سے زائد ملکیت کے آف شور اثاثوں کے مالک ہیں۔کراچی کی صنعت کار خاتون نوشین ریاض خان بھی آف شور کمپنی توحید انٹرنیشنل لمیٹڈ کے ذریعے برطانوی علاقے سرے میں شیڈویچ پیلس سے متصل چھ رومز پر مشتمل ہاؤس کی مالکن ہیں جسے انہوں نے دستمبر 2010 میں 11 لاکھ 75 ہزار پاؤنڈ (18 کروڑ 80 لاکھ روپے) میں خریدا۔

Leave a Reply

Top