You are here
Home > پا کستا ن > 5 کروڑ سال پہلے پاکستان اور بھارت کے نیچے موجود زمین پر کیا انوکھا کام ہوتا تھا ؟ ماہرین کی جدید تحقیق آپ کو حیران کر ڈالے گی

5 کروڑ سال پہلے پاکستان اور بھارت کے نیچے موجود زمین پر کیا انوکھا کام ہوتا تھا ؟ ماہرین کی جدید تحقیق آپ کو حیران کر ڈالے گی

واشنگٹن(ویب ڈیسک) ماہرِ رکازیات نے پیرو میں 4کروڑ26لاکھ سال قدیم 4ٹانگوں والی ایمفیبین وہیل کی باقیات دریافت کی ہیں، ماہرین کے مطابق 5کروڑ سال پہلے پاکستان اور بھارت میں میمل ویلز اور ڈولفنززمین پر چلا کرتی تھیں۔ غیرملکی خبررساں ادارے کےمطابق ماہرین کی جانب سے کی گئی تحقیق میں اشارہ ملا ہےکہ

ماضی میں پائی جانےوالی وہیل مچھلیاں خشکی پر بھی رہا کرتی تھیں اور وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ یہ مچھلیاں صرف پانی تک محدود ہوگئیں، ماہرین کے مطابق 5کروڑ سال پہلے مذکورہ میمل ویلز اور ڈالفنز زمین پر اس خطے میں چلا کرتی تھیں جہاں آج پاکستان اور بھارت ہیں۔کرنٹ بائیولوجی جرنل میں شائع ہونے والی تحقیق میں کہا گیا ہےکہ پیرو سے ملنے والی وہیل مچھلی کی باقیات 4کروڑ 2 لاکھ سال پرانی ہیں جوکہ ایمفیبین مچھلیوں کے حوالے سے تازہ معلومات فراہم کررہی ہیں، مذکورہ باقیات 1کلو میٹر کی گہرائی سے دریافت کی گئی ہیں، ماہرین نے ان باقیات کا جائزہ لینے کے بعد کہا ہےکہ مذکورہ ایمفیبین مچھلی 13فٹ لمبی ہے جو زمین پر چلنے کے ساتھ ساتھ سمندر میں بھی تیر سکتی تھی۔ ایک رپورٹ کے مطابق زمین پر حیاتیاتی ارتقاء سے متعلق یہ سوال سائنسدانوں کو ہمیشہ پریشان کرتا رہا ہے کہ پہلے مرغی تھی یا انڈہ؟ اس سوال کا نیا جواب یہ ہے کہ زمین پر فقاریہ جانوروں میں بیک وقت انڈے اور بچے دینے کا عمل موجود تھا اور اب بھی ہے۔ریڑھ کی ہڈی والے یا فقاریہ جانوروں کے طور پر دنیا میں چھپکلیوں کی نسل کا ایک مخصوص خاندان ایسا بھی ہے، جس میں شامل انواع کی تعداد سینکڑوں میں ہے اور انہی میں سے skink کہلانے والی چھپکلیوں کی ایک قسم ایسی بھی ہے، جو بیک وقت انڈے بھی دیتی ہے اور بچے بھی۔ماہرین کے مطابق تخلیق حیات کے ارتقائی نظریے کی تحت آج تک کا سب سے زیادہ پوچھا جانے والا سوال صدیوں سے یہی ہے کہ پہلے مرغی تھی یا انڈہ؟ یعنی مرغی کا انڈہ جس سے مرغی ہی پیدا ہوتی ہے، وہ تو صرف مرغی ہی دے سکتی ہے لیکن دوسری طرف کسی مرغی کی اپنی پیدائش انڈے کے بغیر ممکن نہیں۔

Leave a Reply

Top
Игровые автоматы