You are here
Home > اسپیشل اسٹوریز > اس کی قیمت نہ لوں گا

اس کی قیمت نہ لوں گا

اس کا نام فلیمنگ تھا اور وہ ایک غریب سکاٹش(سکاٹ لینڈ کا رہنے والا) کسان تھا۔ ایک دن جب وہ اپنے گھر میں کام کر رہا تھا تو اسے اپنے گھر کے قریب موجود دلدل میں سے مدد کی پکار سنائی دی۔ وہ دلدل کی طرف بھاگا۔ وہاں ایک خوفزدہ لڑکا کمر تک دلدل میں دھنسا ہوا

تھا۔ وہ چیخ رہا تھا اور دلدل سے باہر نکلنے کی کوششکر رہا تھا۔ کسان فلیمنگ نے اس لڑکے کو اس خوفناک موت کے چنگل سے نکال لیا۔ اگلے دن ایک بہت خوبصورت بگھی کسان کے دروازے پر رکی اور ایک بہت اور امیر آدمی اس سے اترا۔ اس نے بتایا کہ وہ اس بچے کا باپ ہے جسے گزشتہ روز فلیمنگ نے بچایا تھا۔امیر آدمی نے کسان فلیمنگ سے کہا”تم نے میرے بیٹے کی جان بچائی ہے، میں تمہیں اس کا بدلہ دینا چاہتا ہوں”کسان فلیمنگ نے جواب دیا۔”نہیں میں نے جو کچھ کیا ہے میں اس کی قیمت نہ لوں گا”۔اس وقت کسان فلیمنگ کا اپنا بیٹا بھی ان کے پاس آ کر بیٹھ گیا۔امیر آدمی نے کسان سے پوچھا۔”کیا یہ آپ کا بیٹا ہے؟”کسان نے جواب دیا۔”جی ہاں”امیرآدمی نے کہا۔”میں آپ سے ایک ڈیل (معاہدہ) کرنا چاہتا ہوں۔ مجھے اجازت دیں کہ میں آپ کے بچے کو اپنے بیٹے کے برابر تعلیم دلوا دوں۔ اگر اس میں اپنے باپ کی کوئی خوبی موجود ہوئی تو مجھے یقین ہے ایک دن یہ اس مقام پر پہنچ جائے گا جہاں ہم دونوں اس پر فخر کریں گے”اور اس بچے نے ایسا ہی کیا جیسی اس سے توقع تھی۔کسان فلیمنگ کے بیٹے نے اعلیٰ تعلیمی اداروں میں تعلیم حاصل کی اور سینٹ میری ہسپتال میڈیکل سکول لندن سے گریجویٹ کیا۔ اور پھر اس نے کے بعد وہ دنیا میں ایک شہرہ آفاق سائنسدان سر الیگزنڈر فلیمنگ کے نام سے مشہور ہوا جس کی بہت بڑی ایجاد پنسلین تھی۔کئی سالوں کے بعد امیر آدمی کے اسی بیٹے کو (جس کو کسان فلیمنگ نے دلدل سے بچایا تھا) نمونیا ہو گیا۔ اور اس کی جان پنسلین نے بچائی۔اس امیر آدمی کا نام تھالارڈ رینڈولف چرچل اور اس کے بیٹے کا نام تھاسر ونسٹن چرچل(سابق وزیر اعظم برطانیہ اور انگریزی ادب کا ایک بڑا نام)

Leave a Reply

Top
Игровые автоматы